Riasat maa hoti hay magar

*ریاست ماں ہوتی ہے مگر عملاً ثابت کرنا ہو گا*

*دست بدست معذات کے ساتھ*

*کرونا وائرس کیا “ڈاکو، چور، بدمعاش یاں حکومتی ستم گر” ہے؟؟؟؟؟؟؟؟؟*

*دن کو حملے نہیں کرتا، رات آٹھ بجے کے بعد حملہ آور ہوتا ہے، پانچ دن سویا رہتا ہے صرف دو دن “جمعہ اور ہفتے” کے دن حملہ آور ہوتا ہے، سبزی و فروٹ، مویشی منڈیوں اور سیاسی و مذہبی جلسوں و جلوسوں میں ایک سال سے حملہ آور نہیں ہوا، صرف مسجدوں میں آتا ہے؟*
*کیا “ورلڈ ہیلتھ آرگنائزیشن” سے فی کس مریض ایک کڑور پچیس لاکھ روپے لینے والوں پر حملہ آور نہیں ہوتا بلکہ کرونا مریض اور اس کے لواحقین پر ہر قسم کے حملے کرتا ہے؟*
*کیا کرونا وائرس پاکستان اور پاکستانیوں کی صرف و صرف معاشی تباہی کرنے ہی نکلا ہے؟*
*کیا کرونا وائرس تاجران کے معاشی قتل کرنے، غرباء کو خودکشیوں کروانے کے لیے پھرتا ہے اور طالب علموں کی تعلیم کا صرف دشمن ہے؟*
*اگر ماسک کام کرتا ہے تو دو گز کی دوری کیوں*؟
اگر *دو گز کی دوری کام کرتی ہے تو لاک ڈاؤن کیوں*؟
اگر *لاک ڈاؤن کام کرتا ہے تو ویکسین کیوں*؟
اگر *ویکسین کام کرتی ہے تو پھر سے لاک ڈاؤن کیوں*؟؟؟؟؟

*اللہ کے واسطے!*

*دہشت اور خوف پھیلانا بند کرو، انسانوں کو حوصلہ اور پیار دے کر اس مرض سے بچاؤ کی آگاہی دو*
*پاکستانیوں کا استحصال بند کرو! ملٹی نیشنل کمپنیوں کے لوٹ مار کے بازار بند کرو!*
*حکومتی اور اقتدار کے مفادات کے لیے پاکستانیوں کو عذاب نہ دو!*
*صرف صاف پانی سے ہر گھنٹے بعد ھاتھ دھوئیں، پانچ وقت وضو کر کے نماز پڑھیں اور ایس۔او۔پیز پر عمل کریں*
*ان شاءاللہ کرونا وائرس سے متاثر نہیں ہونگے*
*مقتدر ریاستی اداروں سے اپیل ہے کہ پاکستانیوں کا معاشی قتل نہ ہونے دیں اور طالب علموں کی تعلیم بند نہ کرنے دیں، اگر ریاستی اداروں نے “لاک ڈاؤن” کرنا ہے یاں کاروبار_زندگی بند رکھنا ہے تو پاکستان کے اسی (80٪) فی صد گھروں میں فی کس خاندان تیس (30ہزار روپے) ہزار روپے بلاتفریق دے کیونکہ کاروباری اور دیہاڑی دار طبقہ مکمل طور پر تباہ و برباد ہو کر اب مقروض ہو کر ذہنی امراض کا شکار ہے،اگر ایسا نہ کیا گیا تو بھوک وافلاس، بےروزگاری اور بدترین منہگائی کی وجہ سے ایسا طوفان اٹھے گا جو اس کے ذمے داروں کو صفحہ ہستی سے مٹا دے گا، اگر اب بھی آنے والے طوفان کو دیکھ کر کبوتر کی طرح آنکھوں کو بند رکھا تو پاکستان پہلے جو سیاسی عدم استحکام اور مہنگائی کے شکنجے میں اذیت لے رہا ہے، کہیں فالج کا شکار ہو کر بستر_مرگ پر نہ آ جائے؟ اور نام نہاد ظالم اشرافیہ کو سولی پر چڑھا دے؟۔*

*پاکستان اور پاکستانیوں کے لیے رحم کا طالب*

*حکیم محمد ایوب قریشی۔ میانوالی۔ پنجاب۔ پاکستان۔*

Print Friendly, PDF & Email

Share Your Thoughts

Make A comment

Subscribe By Email for Updates.